کھانے سے بینائی تیز ہو جاتی ہے

“گاجرکھانے سے بینائی تیز ہوتی ہے؟ تحقیق

تحقیق طارق اقبال سے
گاجر کھانے سے بینائی تیز ہوتی ہے؟
– گاجر ایسی سبزی ہے جس کو مختلف شکلوں میں کھایا جاتا ہے
گاجر موسم سرما کی مقبول اور غذائیت سے بھر پور سبزی ہے، جسے مختلف طریقوں میں کھایا جاتا ہے اور ہزاروں برسوں سے اس کی کاشت ہورہی ہے۔ دنیا کے مختلف حصوں میں یہ مختلف رنگوں میں دستیاب ہوتی ہے مگر نارنجی رنگ کی گاجر ہی سب سے زیادہ عام ہے، جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ اسے 16 ویں صدی میں ڈچ کاشتکاروں نے اگانا شروع کیا تھا۔ تاہم آپ نے سوشل میڈیا، اخبارات اور جریدوں میں یہ پڑھتے سنا ہوگا کہ گاجر کھانے سے بینائی بہتر ہوتی ہے، کئی لوگ ایک مفروضے سے زیادہ کچھ نہیں سمجھتے۔
برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی فیوچر نے بھی اس بات کی تحقیق کی کہ آیا گاجر کھانے کے پیچھے سائنس کیا کہتی ہے؟ رپورٹ میں بتایا گیا کہ گاجر بیٹا کیروٹین نامی مالیکیول سے بھرپور ہے، بیٹا کیروٹین ایک ایسا مادہ ہے جو گاجر کو نارنجی یا سُرخ رنگ دیتا ہے۔
جب ہم بیٹا کیروٹین کا استعمال کرتے ہیں تو ہمارا جگر اسے وٹامن اے میں تبدیل کر دیتا ہے، جو ہماری بینائی کو بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے، خاص طور پر رات کے وقت لیکن یہ عمل کیسے کام کرتا ہے؟ ہماری آنکھوں کے اندر لائٹ سینسر ہوتے ہیں جنہیں ’راڈز‘ کے نام سے جانا جاتا ہے جو کم روشنی میں حساس ہوتے ہیں، راڈز صحیح طریقے سے کام کرنے کے لیے روڈوپسن (rhodopsin) نامی کیمیکل پر انحصار کرتی ہیں۔
وٹامن اے کو روڈوپسن بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، یہ انتہائی حساس مادہ ہے اورکم روشنی میں دیکھنے میں مدد کرتا ہے، اب سوال یہ ہے کہ روڈوپسن نامی کیمیکل کیسے کام کرتا ہے؟

جب روشنی ہماری آنکھوں کے پچھلے حصے میں موجود روڈوپسن نامی کیمیکل تک پہنچتی ہے تو مادے کی ساخت میں تبدیلی آتی ہے۔
اس کے نتیجے میں یہ پروٹین (ٹرانسڈوسن transducin کے نام سے جانا جاتا ہے) راڈز کے حصے میں جاتا ہے، جس کے نتیجے میں اعصابی سگنل پیدا ہوتے ہیں اور ہمارا دماغ اس سنگل کے ذریعے دیکھنے میں مدد کرتا ہے۔
اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ گاجر آنکھوں کے لیے صحت مند غذا ہے جو ہماری بینائی کو تیز کرنے میں مدد دیتی ہے۔
یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بینائی بہتر بنانے میں صرف گاجر ہی لیکن بلکہ دیگر سبزیاں بھی اہم کردار ادا کرتی ہیں جن میں بھنڈی، گوبھی، خوبانی اور اس کے علاوہ میوے بھی شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں