60 سالہ غیرملکیوں کا معاملہ جلد حل کریں گے: نو منتخب کویتی وزیر تجارت و صنعت

کویت میں بننے والی نئی حکومت کی جانب سے 60 سالہ تارکین وطن کے مسئلے کا حل تلاش کرنے کی یقین دہانی جبکہ پرائیویٹ سیکٹر میں کویتی شہریوں کو کام پر رکھنے کا مضبوط ارادہ۔ تفصیلات کے مطابق کویت کی نئی حکومت کی تشکیل کے بعد تجارت اور صنعت کے وزیر فہد الشریعان نے اپنے پہلے بیان میں 60 سال یا اس سے زیادہ عمر کے غیر ڈگری شدہ تارکین وطن کے لیے رہائشی اجازت نامے کے بارے میں سخت فیصلہ لینے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے معاملے کو زیر التوا اور حل نہ ہونے کو “پریشان کن” قرار دیتے ہوئے مزید کہا کہ “ہم اس معاملے پر فیصلہ لینے کی تجویز کرتے ہیں”۔ الشریعان نے کہا کہ “صورتحال میں ترمیم ہونی چاہیے اور معاملہ حل ہو جائے گا، اسے اس طرح معطل نہیں چھوڑنا چاہیے۔”

وزارت تجارت میں عہدوں کی تعیناتی کے بارے میں الشریعان نے وضاحت کی کہ “ہم معاملات سے نمٹنے سے پہلے “ہاں یا نہ” نہیں کہہ سکتے تاہم صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ہی کچھ کیا جا سکتا ہے۔ وزارت کے ملازمین اس کے بارے میں زیادہ جانتے ہیں جبکہ ہم صرف سیاسی طور پر آتے ہیں۔ وزارت کے ملازمین کو ہمیشہ اس کے بارے میں بہتر علم ہوتا ہے جبکہ ہم صرف وزارت کے مہمان ہیں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ ’’سیاسی قیادت کا اعتماد ایک قابل احترام چیز ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ آنے والے عرصے کے دوران سب ٹھیک ہو جائے گا کیونکہ چیلنجز زبردست اور بڑے ہیں۔ انشاء اللہ میں جس ٹیم کے ساتھ کام کروں گا وہ یکساں ہو گی اور آنے والے دور میں کچھ مشکلات پر قابو پانے اور ترجیحات کا بندوبست کرنے کی صلاحیت رکھتی ہو گی۔”

بحوالہ: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں