کویت: صحت کی صورتحال سے متعلق کابینہ نے غیر معمولی اجلاس طلب کر لیا

ملک میں صحت کی صورتحال سے متعلق کابینہ کا غیر معمولی اجلاس کل ہو گا۔ روزنامہ القبس کی رپورٹ کے مطابق وزراء کی کونسل کل (پیر کو) عزت مآب شیخ صباح الخالد کی صدارت میں ایک غیر معمولی اجلاس منعقد کرے گی، جس میں وزارتی کمیٹی برائے کورونا ایمرجنسی کی طرف سے دی گئی متعدد سفارشات پر غور کیا جائے گا جس کا مقصد “کورونا” وائرس کے تبدیل شدہ “اومیکرون” تناؤ کے خطرات اور اسے ملک میں پھیلنے سے روکنا اور کم کرنے کے طریقہ کار کو سخت کرنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومتی ذرائع نے القبس کو انکشاف کیا کہ سب سے نمایاں سفارشات میں سے ایک یہ ہے کہ بیرون ملک سے ملک آنے والوں کو یہ پابند کیا جائے کہ وہ پہنچنے پر پی سی آر امتحان دیں، کچھ دنوں کے لیے ہوم قرنطین رہیں اور پھر دوسرا پی سی آر ٹیسٹ کروائیں۔ پی سی آر ٹیسٹ کا نتیجہ منفی ظاہر ہونے کی صورت میں قرنطین کی مدت ختم ہو جائے گی۔

ذرائع نے بتایا کہ میٹنگ میں صحت کی ضروریات کو لاگو کرنے کی ضرورت پر زور دیا جائے گا، خاص طور پر ہوٹلوں، مالز، سینما گھروں، ٹرانسپورٹیشن، شادیوں اور ریستورانوں جیسے بند عوامی مقامات پر ان کے مالکان کو احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کرنے اور اپنے زائرین کے لئے احتیاطی تدابیر کو یقینی بنانے کے لیے ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ میوٹینٹ کے دنیا کے 89 ممالک میں داخل ہونے کے بعد کویت میں “اومیکرون” کے کیس بڑھیں گے جو کہ ایک قدرتی امر ہے لہٰذا اس کے داخلے کو روکنے کے لیے زمینی اور ہوائی بندرگاہوں کو بند کرنے کی ضرورت ہے جس پر کوئی غور نہیں کیا جائے گا جبکہ موجودہ صورتحال میں ویکسین کی تیسری خوراک اور صحت کے اقدامات کے عزم کے ذریعے اس کے خطرات کو کم کیا جائے گا۔

ذرائع نے بتایا کہ “کورونا ایمرجنسی کمیٹی” کل (پیر کو) مجاز حکام سے ملاقات کرے گی یعنی وزارت داخلہ، صحت اور بلدیہ صحت کی ضروریات کو لاگو کرنے، ماسک پہننے اور اس کے خلاف کھڑے ہونے کے لیے کوششوں کو متحرک کرنے کے عمل کو کنٹرول کرنے کے لیے۔ “Omicron” کا پھیلاؤ اور ان لوگوں کے خلاف قانونی اقدامات کرے گی جو کسی بھی اہم جگہ پر صحت کی ضروریات پر عمل نہیں کرتے ہیں۔

وزارتی کمیٹی برائے کورونا ایمرجنسی کا آج بیان پیلس میں اجلاس ہوا جس میں نئے میوٹینٹ “اومیکرون” کے حوالے سے مقامی، علاقائی اور بین الاقوامی وبائی صورتحال میں تازہ ترین پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا کیونکہ اس میں صحت کی صورتحال سے متعلق سرکاری اداروں سے موصول ہونے والی ملک میں تازہ ترین رپورٹس پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ کویت میں وبائی امراض کی صورتحال کے حوالے سے وزارت صحت کی تازہ ترین رپورٹس پر وزیر صحت شیخ ڈاکٹر باسل الصباح کی وضاحت بھی سنی۔

ذرائع :کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں