کویت وزارت داخلہ نے ڈرائیونگ لائسنس رکھنے کے معاملے پر نیا فیصلہ جاری کر دیا

وزارت داخلہ (MOI) کے پبلک ریلیشنز اینڈ سیکیورٹی میڈیا ڈیپارٹمنٹ نے ‘My Identity ھویتی’ ایپلی کیشن میں ڈرائیونگ لائسنس رکھنے کے معاملے پر اپنا اعلان واپس لے لیا ہے۔

قبل ازیں وزارت نے کہا تھا کہ اصل ڈرائیونگ لائسنس پاس نہ رکھنا اور ‘My Identity ھویتی’ ایپلی کیشن کے ذریعے محض ‘ڈیجیٹل’ ڈرائیونگ لائسنس پیش کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے جس وجہ سے موٹرسائیکل و کار ڈرائیور کو 15 دینار جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔ ٹریفک انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کے افسر میجر عبداللہ ابو حسن نے گزشتہ جمعرات کو کویت ٹی وی پر ایک انٹرویو کے دوران کہا کہ ‘مائی آئی ڈی My Identity’ ایپلی کیشن جسے لوگ ‘ھویتی” بھی کہتے ہیں میں ڈرائیونگ لائسنس رکھنے کے بارے میں شہریوں میں ابہام پایا جاتا ہے جو کہ آرٹیکل 36 (پیراگراف 4) قانون کے تحت 01 دینار جرمانے کے ساتھ قابل سزا خلاف ورزی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ڈرائیونگ لائسنس ساتھ نہ رکھنا ٹریفک کی خلاف ورزی اور اس خلاف ورزی کی صورت میں سیکیورٹی آفیسر کے طریقہ کار میں رکاوٹ تھی جس کے لیے ڈرائیور کا لائسنس واپس لینا پڑتا ہے اسی لیے (اصلی کاغذی) ڈرائیونگ لائسنس ہونا ضروری ہے تاہم اتوار کو جاری کردہ ایک بیان میں وزارت داخلہ میں تعلقات عامہ اور سیکورٹی میڈیا ڈیپارٹمنٹ نے کہا کہ “ای حکومت” کے مستقبل کے وژن کو حاصل کرنے کے فریم ورک اور My Identity ایپلی کیشن کو اپنانے کے کابینہ کے فیصلے پر عمل درآمد میں الیکٹرانک ڈرائیونگ لائسنس درست ہے اور اسے جنرل ٹریفک ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کردہ ڈرائیور کے لائسنس کے طور پر سمجھا جاتا ہے جو تمام الیکٹرانک طریقہ کار کی حمایت کرتا ہے جو کہ شہریوں اور رہائشیوں کے لیے اپنے لین دین کو الیکٹرانک طریقے سے مکمل اور آسان بناتا ہے۔

بحوالہ: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں