کویت میں غیرملکیوں کے لیے ہیلتھ انشورنس کی قیمت میں اضافہ

کویت میں لازمی ہیلتھ انشورنس کی قیمت میں اضافہ، انشورنس کی قیمت 130 دینار سے ​​شروع ہو گی۔

روزنامہ الانباء کی رپورٹ کے مطابق ہیلتھ ایشورنس ہسپتال کمپنی (ضمان) کے سی ای او ثامر عرب نے انکشاف کیا کہ کویت کے رہائشیوں کی ہیلتھ انشورنس پالیسی کی قیمت 130 دینار سے شروع ہوگی پھر یہ ہر دو سال بعد 20 دینار کی قیمت کے ساتھ متواتر اضافہ کیا جائے گا جب تک کہ یہ 9 سال کے بعد 190 دینار فی شخص کی بیمہ کی زیادہ سے زیادہ حد تک نہ پہنچ جائے۔ روزنامہ الانباء کو دیئے گئے ایک خصوصی بیان میں عرب نے کہا کہ شہریوں اور دیگر کو مختلف “ضمان” خدمات بشمول طبی مشورہ، تشخیص، علاج اور ادویات کی قیمت جو کمپنی فراہم کرے گی سے فائدہ اٹھانے کا حق ہے۔ انہوں نے اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ نئی ضمان انشورنس پالیسی ان رہائشیوں کی تمام ضروریات کو پورا کرے گی جو صحت کی دیکھ بھال کے تمام پہلوؤں سے انشورنس خریدتے ہیں۔ انہوں نے وضاحت کی کہ کمپنی کی جانب سے دی جانے والی انشورنس پالیسی کویت میں نجی شعبے میں کام کرنے والے رہائشیوں کے لیے صرف آرٹیکل 18 نمبر اقامہ کے مطابق اور ان کے اہل خانہ کو وزارت صحت کی طرف سے فراہم کردہ موجودہ لازمی ہیلتھ انشورنس کی جگہ نئی لازمی ہیلتھ انشورنس فراہم کرنے کے گرد گھومتی ہے۔

عرب نے نشاندہی کی کہ لازمی ہیلتھ انشورنس پالیسی فی الحال وزارت صحت کی طرف سے 50 دینار میں جاری کی جاتی ہے جس میں ریڈیولاجی خدمات، لیبارٹری، سرکاری مراکز اور ہسپتالوں میں دیگر خدمات کے لیے اضافی فیس لی جاتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کمپنی کی جانب سے صحت کی دیکھ بھال کے لیے مربوط نظام کا نفاذ (ہیلتھ مینٹیننس آرگنائزیشن HMO) ایک نئی پالیسی فراہم کرتا ہے جو صحت کی دیکھ بھال کے تمام پہلوؤں میں فائدہ اٹھانے والے کی تمام ضروریات کو پورا کرے گی۔

عرب نے وضاحت کی کہ پالیسی کی قیمت 130 دینار تمام تارکین وطن پر لاگو ہوگی بشمول بیوی اور بچے جن کے پاس خاندان میں شامل ہونے کے لیے رہائشی حیثیت ہے خاص طور پر چونکہ پالیسی کی قیمت جو کہ ایک شخص کے لیے بنیادی قیمت کے طور پر 130 دینار رکھی گئی ہے پر غور کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ تارکین وطن کے لیے نجی ہیلتھ انشورنس کا اقامہ کی تجدید کی لازمی ہیلتھ انشورنس سے کوئی تعلق نہیں ہے جیسا کہ وزارت صحت کے موجودہ لازمی ہیلتھ انشورنس سسٹم کے مطابق ہے۔ کویت میں رہنے والے کسی فرد کے لیے انشورنس لازمی ہے چاہے اس کے پاس وزراء کی کونسل اور وزارت صحت کے فیصلوں کے مطابق نجی ہیلتھ انشورنس ہی کیوں نہ ہو۔

بحوالہ:  کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں