کویت اور پاکستان کے مابین براہ راست پروازوں کا معاملہ کیا تھا، اصل وجہ سامنے آ گئی

کویت ایئر لائنز کو پاکستان میں کام کرنے کے لیے تکنیکی ضرورت درکار ہے: ذرائع

تفصیلات کے مطابق کویت نے پاکستان کی قومی ائیرلائن PIA کی پروازوں پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے اور نہ ہی دونوں ممالک کے سول ایویشن کے درمیان کوئی تنازعہ ہے جیسا کہ پاکستان نے کویت سے پاکستان جانے والی پروازیں کم کرنے کا فیصلہ کیا۔ ذرائع نے بتایا کہ پاکستان سے آنے والی پروازوں پر کوئی پابندی نہیں ہے اور نہ ہی دونوں ممالک کی سول ایوی ایشن کے درمیان کوئی تنازعہ ہے بلکہ یہ محض تکنیکی ضروریات سے متعلق ہے۔ پاکستان سول ایوی ایشن کی طرف سے کچھ تقاضے کیے گئے ہیں جو سیکورٹی اور سیفٹی کے معیار پر زور دیتے ہیں۔ دونوں فریقوں نے دونوں ممالک کی ہوائی نقل و حمل کی صنعت اور قومی کیریئر کے مفاد کے لیے مشترکہ طور پر اتفاق بھی کیا ہے۔ اس سے قبل پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی نے اعلان کیا تھا کہ اس نے دو کویتی ایئر لائنز میں سے ہر ایک سے ہفتہ وار پرواز کم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ پاکستان کے مقامی اخبار Dawn News نے اتھارٹی کے ترجمان کے حوالے سے بتایا تھا کہ کویت کی دو ایئرلائنز میں سے ہر ایک کی پاکستان سے آنے اور جانے والی تین ہفتہ وار پروازیں کم ہوکر یکم اکتوبر سے صرف دو پروازیں رہ گئی ہیں۔ کویت دونوں ممالک کے درمیان ہوائی خدمات کے معاہدے کی شرائط سے منسلک ہے اور پاکستان نے کویت کو خبردار کیا ہے کہ اگر پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کو کویت میں اپنی پروازیں دوبارہ شروع کرنے کی اجازت نہ دی گئی تو وہ کویت کے خلاف ریگولیٹری اقدامات اٹھائے گا۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں