کویت نے پاکستانی ڈاکٹروں کی نوکریوں کو مستقل کنٹریکٹ میں تبدیل کر دیا

کویت نے اپنے 140 ڈاکٹروں کو مستقل کنٹریکٹ دیا ہے: پاکستانی میڈیا رپورٹ

پاکستانی میڈیا رپورٹ کے مطابق کویت کی وزارت صحت نے پاکستان کے تقریبا 140 ڈاکٹروں کو مستقل کنٹریکٹ دے دئیے گئے ہیں جو امارات میں عارضی بنیادوں پر کام کر رہے تھے تاکہ وہ کورونا وائرس وبائی مرض سے لڑنے میں مدد کر سکیں۔ ڈاکٹروں نے پہلے کویت کے “Lokum” سسٹم کے تحت تین ماہ کی مدت کے لیے کام کیا تھا جسے مزید تین ماہ کے لیے بڑھا دیا گیا تھا تاہم اب مستقل تقرری کے بعد ان کے پاس دوسرے غیر کویتی ڈاکٹروں کی طرح معاہدے اور ملازمت کے عہدے ہوں گے۔ لوکم سسٹم کے تحت ایک ڈاکٹر کو عارضی بنیادوں پر رکھا جاتا ہے اور ہسپتال ، کلینک یا پریکٹس میں روٹیشن گیپ کو پورا کرتا ہے۔ بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ کے ڈائریکٹر جنرل کاشف احمد نور نے عرب نیوز کو بتایا کہ “اب تک اکتوبر 2020 سے چارٹرڈ فلائٹس کے ذریعے کل نو بیچوں میں 239 ڈاکٹروں کو کویت بھیجا گیا ہے۔” ساتویں بیچ تک کے تمام 140 ڈاکٹروں کو

کویت میں وزارت صحت نے مستقل کنٹریکٹ دیا ہے جن میں سے دو ڈاکٹر اپنی ذاتی وجوہات کی بنا پر پاکستان واپس آئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کویت پاکستانی ڈاکٹروں کو بیچ کے مطابق مستقل کنٹریکٹ دے رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ستمبر کے آخر میں مزید ڈاکٹروں کو کویت بھیجے گا۔ انہوں نے عرب نیوز کو مزید بتایا کہ “معاہدے کے تحت کویت میں ڈاکٹروں ، نرسوں اور تکنیکی ماہرین سمیت 1500 کے قریب عملہ پہلے ہی کام کر رہا ہے۔” جیسا کہ عالمی ادارہ صحت اور دیگر اداروں کی جانب سے کوویڈ19 کے بارے میں ہمارے ردعمل کو سراہا گیا کویت پاکستان سے زیادہ سے زیادہ طبی عملہ لینے کے لیے بے حد خواہش مند تھا اور وہ ان کی کارکردگی سے مطمئن ہیں۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں