کویت واپس آنے والے بھارتی شہری ٹکٹوں کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے پریشان

ہوائی ٹکٹوں کی زیادہ قیمتیں بھارت سے آنے والے مسافروں کی واپسی میں بڑی رکاوٹ بن گئیں۔

تفصیلات کے مطابق بھارت سے کویت کے لیے ایک طرفہ ٹکٹوں کی تاریخی بڑھتی قیمتیں بھارتی شہریوں کی بھارت سے کویت واپسی کے لئے بہت بڑی رکاوٹ بن گئی ہیں۔ کویت کی ڈائریکٹریٹ جنرل برائے سول ایوی ایشن نے کل بھارت سے براہ راست پروازیں چلانے کے اعلان کے بعد ستمبر کے پہلے دو ہفتوں کے دوران ممبئی ، کوچی ، حیدرآباد اور چنئی کے شہروں کے لئے ون وے ٹکٹ کے لئے 700 دینار سے 850 دینار تک کی قیمتوں کا حوالہ دیا جو ممکنہ طور پر کویت ائیر کمپنیز کی قیمتیں ہوں گی۔ بھارتی کیریئرز کو ہفتہ وار تقریبا 2800 مسافروں کی گنجائش دی جارہی ہے جیسا کہ کویت کے قومی کیریئرز ( کویت ایئر ویز اور جزیرہ ایئر ویز) دونوں تقریبا 5،600 بھارتی مسافروں کو ملک میں لا سکتے ہیں۔

دوسری جانب ہندوستانی کیریئرز نے ابھی تک اپنی ٹکٹوں کی قیمتوں کا اعلان نہیں کیا ہے لیکن ایئرلائن کے قابل اعتماد ذرائع نے ٹائمز کویت کو بتایا ہے کہ قیمت اتنی زیادہ ہونے کی توقع نہیں ہے اور ممکنہ طور پر کویت کیریئرز جو قیمتیں دے رہے ہیں اس سے نصف ہوگی۔ ایک ٹریول ایجنٹ نے ٹائمز کویت کو بتایا کہ کچھ ایئرلائنز مسافروں سے زیادہ سے زیادہ مانگ کی کوشش کر رہی ہیں تاکہ قیمتوں میں اضافہ کر کے فلکیاتی سطح پر واپس آ جائیں جو پہلے کبھی نہیں دیکھی گئی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایسی صورت حال سے فائدہ اٹھانا مارکیٹ یا صنعت کے بہترین مفاد میں نہیں ہے۔ اگر وہ ماضی میں درپیش نقصانات کو پورا کرنا چاہتے ہیں تو یہ عمل مناسب نہیں ہم پروازوں کا انتخاب کرنے سے پہلے قیمتوں کے زیادہ مناسب سطح پر آنے کا انتظار کرنے کا مشورہ دیتے ہیں۔

یاد رہے کہ بھارت سے براہ راست تجارتی مسافر پروازیں تقریبا 18 ماہ سے معطل ہیں اور اس کا اثر اب ٹکٹوں کی قیمتوں اور لیبر مارکیٹ دونوں پر محسوس کیا جا رہا ہے جہاں کویت میں زندگی معمول کی طرف آرہی ہے وہیں قیمتوں میں اضافہ آسمان کو چھو رہا ہے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں