کویت ائیرپورٹ حکام ممنوعہ ممالک سے رہائشیوں کی واپسی کے طریقہ کار کے منتظر

کویت کی وزراء کونسل نے ممنوعہ ممالک کے لئے پروازیں تو بحال کردیں تاہم مسافروں کی تعداد اور متعلقہ ممالک کے لئے ہوائی آپریشن شروع کرنے کی تاریخ کا تعین اب تک نہیں کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کابینہ نے 6 ممالک پاکستان ، مصر ، بھارت ، بنگلہ دیش ، سری لنکا اور نیپال کے ساتھ براہ راست پروازیں کھولنے کی منظوری دینے کا فیصلہ کیا ہے تاہم کویت بین الاقوامی ہوائی اڈے کے حکام کو اب تک کابینہ کی جانب سے وضاحتیں موصول نہیں ہوئیں اور اس وجہ سے سفر کے لئے کھولنے کی کوئی مخصوص تاریخ طے کرنا ممکن نہیں ہے۔ فیصلے کی تمام وضاحتیں موصول ہونے کے بعد ہی ہوائی آپریشن شروع کیا جاسکتا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ایئر پورٹ حکام آنے والوں کی تعداد میں کسی بھی اضافے سے نمٹنے اور تمام ممالک کے ساتھ فضائی حدود کھولنے کے لیے تیار ہیں تاہم اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ اگر آنے والوں کی تعداد میں کوئی اضافہ نہیں ہوگا تو اس سے منصوبے پر عمل درآمد میں خلل پڑے گا۔ 7،500 مسافروں کے حالیہ اضافے کے مطابق ایئرلائنز کے منصوبوں کی بالآخر منظوری کے بعد روز ایک نیا فیصلہ سامنے آرہا ہے لیکن اب یہ تعداد بھی ناکافی ہوگی اور مزید 6 ممالک کے لئے آپریشن شروع کرنے کے ساتھ مسافروں کی تعداد میں بھی اضافہ ضروری ہے۔

اس تناظر میں فیڈریشن آف کویتی ٹورازم اینڈ ٹریول آفس کے سربراہ محمد المطیری نے نے کہا کہ کابینہ کے فیصلے کے بعد مسافروں کی تعداد میں مزید اضافہ کرنا چاہئے۔ اگر آنے والوں کی مقررہ تعداد جو کہ 7،500 مسافر یومیہ ہے منسوخ نہیں کی گئی تو اس کے نتیجے میں کچھ ایئرلائنز آمد کے لیے محدود نشستوں کی وجہ سے فضائی حدود کھولنے سے قاصر ہوں گی۔ المطیری کے مطابق اگر ملک میں آنے والوں مسافروں کی تعداد میں اضافہ نہ کیا گیا تو مسافروں کو ٹکٹ کے حصول میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں