کویت: بیرون ممالک پھنسےآئل سیکٹر ملازمین کے متعلق سخت فیصلہ

بیرون ممالک پھنسے ہوئے غیر ملکی جو کویت واپس نہیں آسکتے انہیں سالانہ چھٹی پر سمجھا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق بیرون ملک پھنسے ہوئے تیل کے شعبے کے وہ ملازمین جو ہوائی اڈوں کی بندش اور ہوائی ٹریفک کی معطلی کی وجہ سے ملک واپس نہیں آسکتے ان ملازمین کو سالانہ چھٹی پر ملک سے باہر خیال کیا جائے گا۔ روزنامہ الانباء کی رپورٹ کے مطابق آئل سیکٹر کے بیرونِ ملک پھنسے ملازمین کی موجودہ غیر حاضریوں کو ان کی سالانہ چھٹیوں کے بیلنس میں سے کاٹا جائے گا اور موجودہ سال میں ناکافی چھٹیوں کی صورت میں اگلے سال کے لیے ان کی چھٹی کا بیلنس استعمال کیا جائے گا اور اگر ان کا اگلے سال کی چھٹیوں کا بیلنس بھی مکمل طور پر ختم ہوگیا تو انہیں بلا معاوضہ چھٹیوں پر سمجھا جائے گا اور یہ کہ انہیں اس فیصلے پر مطلع کیا جائے گا کیونکہ کام پر حاضر نہ ہونا ملازمین کے بس میں نہیں بلکہ حکومتی فیصلہ ہے تاہم ملازمین کو نہ تو برطرف کیا جائے گا اور نہ ہی ان کے خلاف کوئی کاروائی ہوگی۔ دریں اثنا ذرائع نے بتایا کہ آئل سیکٹر کمپنیوں نے کویتائزیشن پالیسی کو نافذ کرنے اور غیر ملکی ملازمین کی جگہ شہریوں کو بھرتی کرنے کے لیے اپنی ملازمتوں کو تین اقسام (آسان ، سست ، مشکل ) میں تقسیم کیا ہے۔ اس کے مطابق کمپنیاں پہلے ‘آسان’ اور ‘سست’ نوکریوں کو تبدیل کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں اور پھر طویل عرصے میں ‘مشکل’ کام کرنے والے کارکنوں کو تبدیل کیا جائے گا۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں