غیرملکیوں کی یکم اگست سے کویت داخلے سے متعلق اہم خبر

غیر ملکیوں کو یکم اگست سے ملک میں داخل ہونے کے لئے کورونا ایمرجنسی کمیٹی کی منظوری کی ضرورت نہیں۔

روزنامہ الانباء کے ذرائع کی رپورٹ کے مطابق یکم اگست سے غیر ملکیوں کو ملک میں داخلے کی اجازت دینے کے فیصلے پر عمل درآمد کے لئے “کورونا ایمرجنسی کمیٹی” سے استثنیٰ حاصل کرنے کی کوئی شرط قائم نہیں کی گئی ہے جبکہ آنے والے رہائشی فیصلے کے متن کے مطابق جائز رہائشی اجازت نامہ (اقامہ)، منظورشدہ ویکسین کی دو خوراکیں یا جانسن اینڈ جانسن ویکسین کی ایک خوراک اور PCR کی منفی ٹیسٹ رپورٹ کی شرائط پوری کرتے ہوئے ملک میں داخل ہوسکتے ہیں۔ باخبر ذرائع نے بتایا کہ کابینہ کے غیر ملکیوں کو ملک میں داخلے کی اجازت کے فیصلے پر عمل درآمد کرنے کا طریقہ کار جس میں یہ شرط عائد کی گئی ہے کہ منظور شدہ ویکسین اور اعلان کردہ شرائط کے مطابق یکم اگست تک اس پر عمل درآمد کیا جائے گا تاہم عمل درآمد کے دوران کورونا ہنگامی صورتحال کے لئے اعلی وزارتی کمیٹی سے استثنیٰ کی ضرورت نہیں ہے لیکن یہ بھی واضح کیا گیا کہ صورتِحال کی تبدیلی کے ساتھ کسی بھی نئے فیصلے کی صورت میں یہ فیصلہ تبدیل بھی کیا جاسکتا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ کورونا ایمرجنسی کمیٹی کے ذریعہ مستثنیٰ داخلے کی اجازت کا اعلان یکم اگست کے فیصلے کے نفاذ کی تاریخ سے قبل باقی مدت سے متعلق ہے جو ججوں ، ڈاکٹروں اور آئل سیکٹر کے ملازمین پر لاگو تھا۔

غیر ملکیوں کے لئے ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ کی منظوری کے خودکار طریقہ کار کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں وزارت صحت کے ذرائع نے جواب دیا کہ ” ابھی تک اس کا اعلان نہیں کیا گیا ہے جس کا تعلق وزارت سے ہے اس فیصلے پر عمل درآمد میں ابھی ایک ہفتہ باقی ہے۔” غیر کویتیوں کو براہ راست یا ٹرانزٹ میں داخلے کی اجازت کے فیصلے پر عمل درآمد کی توقعات پر ذرائع نے جواب دیا کہ کسی بھی بات کی توقع کی جاسکتی ہے اور معاملہ وزراء کی کونسل کے پاس ہے کیونکہ وبائی ماحول میں ہم کسی بھی چیز کی توقع کرتے ہیں بشمول عوام فیصلے کی منسوخی جیسے ہر فیصلے کے لئے تیار رہے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں