کویت: معمول کی زندگی میں بتدریج واپسی کے پانچويں مرحلے میں واپسی فی الوقت ممکن نہیں

شادیوں کی تقریبات، محفلیں اور دیوانیوں میں مجالس اگلا نوٹس آنے تک ملتوی کردی گئیں ہیں۔

باخبر ذرائع نے روزنامہ الانباء کو خصوصی بیان دیتے ہوئے بتایا ہے کہ کورونا ایمرجنسی کمیٹی کی جانب سے وزراء کی کونسل کو متعدد سفارشات پیش کی گئیں ہیں جن میں کابینہ کے حالیہ فیصلے کی بنیاد پر پابندی ختم کرنے کی سفارش بھی شامل ہے جس میں رمضان المبارک کے آخری ایام میں پابندی کے مکمل خاتمے یا ترمیم کا فیصلہ زیر غور آنا تھا۔

ذرائع نے زور دے کر کہا کہ شادیوں اور مختلف طرح کے دیوانوں کے اجتماعات مزید اطلاع تک ملتوی کردیئے گئے ہیں۔ انہوں نے وضاحت کی کہ ماہرین کی سفارشات میں کام کرنے والے قواعد و ضوابط کے اطلاق پر زور دیا گیا ہے تاکہ کسی بھی زیادتی یا انفرادی اقدامات سے وزارت صحت کے منصوبوں کو الجھایا نہ جاسکے اور وزارت کو مجبور نہ کریں کہ وہ گذشتہ سال کی طرح مکمل پابندی کے اطلاق کے فیصلے پر نظرثانی کرے جبکہ اس آپشن کو اب مکمل طور پر خارج کردیا گیا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ موجودہ صورتحال میں ملازمین کی تعداد کو بڑھا کر 70 فیصد کرنے کا امکان نہیں ہے کیونکہ معمول کی زندگی میں بتدریج واپسی کے پانچويں مرحلے میں واپسی فی الوقت ممکن نہیں ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ تغیر پذیر کورونا وائرس کو روکنے کے لئے احتیاطی طور پر کویتی شہریوں کے لئے 72 گھنٹے قبل کئے گئے پی سی آر ٹیسٹ کے فیصلے میں کوئی ترمیم نہیں کی گئی تاہم ملک میں داخلے کے بعد ایک ہفتہ گھریلو قرنطین کا فیصلہ زیر غور ہے۔

ذرائع: الانباء ۔ کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں