کویت نے ممنوعہ ممالک کی براہ راست پروازیں بحال کر دیں

تمام ممالک کو ممنوعہ ممالک کی فہرست سے نکال کر “اعلٰی خطرے کے ممالک” کی فہرست میں شامل کر دیا گیا ہے جس سے اب تمام ممالک کو براہ راست کویت آنے کی اجازت ہو گی۔

تفصیلات کے مطابق سول ایوی ایشن کی جنرل انتظامیہ نے کوویڈ 19 وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے ہونے والے نقصانات کا سامنا کرنے کے لئے صحت کے حکام کی ہدایات کی بنیاد اور خاص طور پر نئے کورونا وائرس کے تناؤ کے پیش نظر نئے اقدامات کا اعلان کیا ہے جن کا اطلاق کویت بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اتوار 21 فروری 2021 تک کیا جائے گا۔

“سول ایوی ایشن” نے اب پاکستان و بھارت سمیت دیگر 35 ممالک کو “ممنوعہ” کی بجائے “اعلی خطرہ” کی فہرست میں شامل کیا ہے۔ ذرائع نے روزنامہ الرای کو بتایا کہ پچھلے 35 میں تقریبا 33 نئے ممالک کا اضافہ کرنے کے بعد اعلی خطرے والے ممالک کی تعداد 60 سے زیادہ ہو گئی ہے۔
صحت کے حکام نے جن 33 ممالک کو شامل کرنے کی درخواست کی ہے وہ درج ذیل ہیں:

جنوبی افریقہ، پرتگال، انگولا، بوٹسوانا، جمہوری کانگو، کیپ وردے، ایسواتینی لیسوتھو، مالاوی، زمبابوے، ترکی، جاپان، ماریشیس، سیچلس، بولیویا، موزمبیق، نامیبیا، تنزانیہ، زیمبیا، سورینام، سویڈن، آئر لینڈ، سوئٹزرلینڈ، وینزویلا، پیراگوئے، ایکواڈور، گیانا، فرانسیسی گیانا، یوروگوئے، ٹرینیڈاڈ اور ٹوباگو، متحدہ عرب امارات، جرمنی اور ریاستہائے متحدہ امریکہ۔

ان ممالک کو ان سابقہ ممالک کی ​فہرست میں شامل کیا گیا ہے جو درج ذیل ہیں:

ایران، چین، برازیل، کولمبیا، آرمینیا، بنگلہ دیش، فلپائن، شام، اسپین، بوسنیا اور ہرزیگوینا، سری لنکا، نیپال، بھارت، عراق، میکسیکو، انڈونیشیا، چلی، پاکستان، مصر، لبنان، ہانگ کانگ، اٹلی، شمالی مقدونیہ، مالڈووا، پاناما، پیرو، سربیا، مونٹی نیگرو اور ڈومینیکنس، کوسوو، افغانستان، ارجنٹائن، فرانس، یمن اور برطانیہ۔

سول ایوی ایشن نے ایک پریس ریلیز میں کہا ہے کہ “اعلٰی خطرے” سے دوچار ممالک سے براہ راست پروازوں کے ذریعے آنے والے تمام مسافروں کو “کویت مسافر” پلیٹ فارم پر اندراج کر کے اپنے خرچ پر 14 دن کی مدت کے لئے مقامی ہوٹل میں ادارہ جاتی قرنطین کرنے کی ضرورت ہوگی جبکہ ان اعلٰی خطرے سے دوچار ممالک کے علاوہ دوسرے ممالک سے آنے والے باقی مسافروں کو “کویت مسافر” پلیٹ فارم پر اندراج کرکے اپنے اخراجات پر 7 دن کی مدت کے لئے ادارہ جاتی قرنطین کی غرض سے مقامی ہوٹل کی بکنگ کرنا ہوگی جبکہ قرنطین مدت کے بقیہ 07 دن اپنے گھر میں مکمل کرنا ہوں گے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ بیرون ملک علاج کے خواہاں کویتی شہری، بیرون ملک تعلیم حاصل کرنے والے کویتی طلباء، اکیلے سفر کرنے والے 18 سال سے کم عمر کے مسافر، سفارتی کور کے ممبر اور طبی عملہ کو ادارہ جاتی (ہوٹل) قرنطین فیصلے سے مستثنٰی حاصل ہو گی اور وہ 14 دن کی مدت کا قرنطین اپنے گھروں میں مکمل کریں گے۔

بیان میں زور دیا گیا ہے کہ “کویت مسافر” پلیٹ فارم http://kuwaitmosafer.gov.kw پر اندراج کئے بغیر کویت آنے والی پروازوں پر کسی بھی مسافر کو قبول نہیں کیا جائے گا۔

بحوالہ: الرائی ۔ کویت اردو نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں