کویت نے مزید 935 اقامے منسوخ کردیے

کویت سٹی: کویت سے باہر بیرون ملک پھنسے مزید 935 افراد کے اقامے منسوخ کردئیے گئے۔

کویتی میڈیا کے مطابق کورونا بحران کے دوران الیکٹرانک خدمات (آن لائن سروس) کی دستیابی اور ملک سے باہر مزدوروں کے لیے آن لائن ورک پرمٹ اور رہائشی اجازت ناموں کی تجدید کی اجازت کے باوجود تجدید میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا، اس کے علاوہ کئی فضائی حدود کی بندش کے باعث بھی کئی کارکنان اپنے رہائشی اجازت ناموں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت کے اعدادوشمار کے مطابق غیر ملکیوں کے 935 رہائشی اجازت نامے 10 دن کے اندر منسوخ کیے گئے ہیں جس کی بڑی وجہ ان کے اسپانسر یا ان کی کمپنیوں کے ورک پرمٹ کی تجدید میں ناکامی ہے۔

اعدادو شمار کے مطابق رواں سال 12 جنوری کو جدید شکل میں ’ایشال‘ سسٹم کے آغاز کے بعد سے کارکنوں کے متعدد رہائشی اجازت نامے کینسل کردئیے گئے ہیں جن کی کل تعداد 2716 تک پہنچ گئی ہے، جس میں 197 موت کی وجہ سے اور 1584 ملک چھوڑنے کے خواہشمند افراد کے ہیں جبکہ تقریبا 30 ہزار غیرملکیوں نے اپنے ورک پرمٹ کی تجدید کی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں بھی وزارت افرادی قوت نے ایسے 33 ہزار 400 تارکین وطن کے ورک پرمٹ منسوخ کر دیے تھے جن کے رہائشی اقامے بیرون ملک پھنس جانے کی وجہ سے ختم ہو چکے تھے۔

بحوالہ: عرب ٹائمز کویت

اپنا تبصرہ بھیجیں