رواں برس 13 ہزار غیرملکی ملک بدر کر دیے گئے،

رواں سال 2020 کے آغاز سے اب تک مختلف ممالک سے 13 ہزار تارکین وطن کو ان کے آبائی ممالک ڈیپورٹ کیا گیا۔

مقامی روزنامہ القبس نے رپوٹ کیا کہ یہ جرائم اور جرائم کے مرتکب افراد سے لیبر مارکیٹ کو پاک کرنے کا حکومتی منصوبہ ہے۔
ان میں سے بیشتر، یعنی تقریباً 90٪ افراد عدالتی فیصلوں کی بنیاد پر ملک بدر کیے گئے، اور تقریباً 10٪ افراد انتظامی طور پر وزارت داخلہ کے فیصلے سے ملک بدر ہوۓ۔

900 مرد اور خواتین فی الحال ڈیپورٹیشن جیل میں ملک بدری کے طریقہ کار مکمل ہونے کے منتظر ہیں۔ رپورٹ میں یہ بھی شامل کیا گیا کہ ان دنوں ملک بدری کی شرح پہلے کے مقابلے میں بہت زیادہ تیز ہوگئی ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ حکام کی جانب سے کسی بھی قسم کی خلاف ورزی یا قانون شکنی کرنے والوں کو ہر گز برداشت نہی کیا جاۓ گا

زراٸع نے مزید بتایا کہ کسی بھی معاملے میں ملوث افراد کو کسی قسم کی چھوٹ دیے بغیر متعلقہ حکام کے حوالے کرنے کی سخت ہدایات جاری کی گئیں ہیں۔

بحوالہ : کویت ٹوڈے

اپنا تبصرہ بھیجیں