سعودی عرب نے جارحانہ خاکوں کی مذمت کی،

سعودی عرب نے منگل کے روز پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کے کارٹونوں کی مذمت کی ہے اور اسلام کو دہشت گردی سے جوڑنے سے انکار کیا ہے۔ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے بیانات کے بعد سے فرانسیسی سامان کا بائیکاٹ کرنے کی کالیں مسلم دنیا میں دی جارہی ہیں۔

میکرون کا بیان اس وقت سامنے آیا جب پیرس کے مضافاتی علاقے میں ایک فرانسیسی ٹیچر کا سر قلم کردیا گیا۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA کے مطابق، سعودی وزارت خارجہ نے کہا کہ ”مملکت ہدایت اور امن کے پیغمبر، محمد بن عبد اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یا کسی اور نبی کی بدنامی پر مبنی دہشت گردانہ اقدام کی سخت مزمت کرتی ہے۔“

اسلام کا جائے وقوع، سعودی عرب جسے آزادی، فکر، حترام اور امن کی روشنی عام کرنے والا بھی کہا جاتا ہے، نفرت، تشدد اور انتہا پسندی کو جنم دینے والے تمام طریقوں کی سرزنش کرتا ہے۔ اسلام میں انبیاء کی نمائندگی اور ان کی بدنامی سختی سے منع ہے۔

بحوالہ : گلف نیوز

اپنا تبصرہ بھیجیں