قونصل خانے کی کوششیں کسی کام نہ آئیں دبئی ائیر پورٹ پر پھنسے545پاکستانیوں کو داخلے کی اجازت نہ ملی ،گروپ کی شکل میں پاکستان واپس بھیجا جانے لگا

دبئی ایئرپورٹ پرگزشتہ 2روز سے سینکڑوں پاکستانی پھنسے ہوئے ہیں جس کی وجہ یہ بتائی گئی ہے کہ ان کے پاس امارات داخلے کے لیے کم از کم دو ہزار درہم رقم موجود نہیں،اس کے علاوہ ہوٹل کی بکنگ بھی نہیں کروائی گئی۔ جو تازہ ٹریول ایڈوائزری کے مطابق لازمی ہے۔ دبئی ایئرپورٹ حکام نے شرائط پر پورے نہ اترنے والے پاکستانیوں کو گروپ کی صورت میں واپس بھجوانا شروع کر دیا ہے۔ائیر پورٹ پر پھنسے ان 545 پاکستانی مسافروں کو 10، 15 افرادکے گروپ کی صورت میں مختلف پروازوں کے ذریعے پاکستان ڈی پورٹ کیاجا رہا ہے۔

دوسری جانب دبئی میں واقع پاکستانی قونصل خانے کا کہنا ہے کہ ان مسافروں نے امارات کی نئی ٹریول ایڈوائزری پر عمل کیے بغیر ہی دبئی کا سفر کیا، مطلوبہ رقم نہ ہونے کے باعث انہیں امارات میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔قونصل خانے کا کہنا ہے کہ حکام کی کوششوں سے کچھ مسافروں کو اماراتی حکومت نے ملک میں داخلے کی اجازت دیدی ہے۔ تاہم زیادہ تر مسافروں کو واپس بھیجا جا رہا ہے۔ قونصل خانے کا ائیرپورٹ پر موجود عملہ مسافروں کو خوراک اور دیگرضروری سہولیات فراہم کر رہا ہے۔ ایک پاکستانی نے بتایا کہ ہم یہاں پیسے جوڑ جوڑ کر دبئی پہنچے تھے، مگر سفارتی کوششوں کے باوجود ہمیں واپس بھیجا جا رہا ہے۔ یہ صورتحال ہمارے لیے بہت پریشان کن ہے۔ یاد رہے کہ وزٹ ویزا پر متحدہ عرب امارات جانے والے مسافروں کیلئے نئی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات پہنچنے والے مسافر کیلئے پاس کم از کم دو ہزار درہم ہونا لازمی ہوگا ، شو منی کے علاوہ واپسی کا کنفرم ٹکٹ اور کنفرم ہوٹل بکنگ بھی لازمی ہوگی۔ رپورٹ کے مطابق ہوٹل کے بجائے کسی کے پاس ٹھہرنے کی صورت میں رہائشی پتہ کی تفصیلات ہونا لازمی ہوں گی ، پی آئی اے انتظامیہ بورڈنگ سے قبل یا پاکستانی امیگریشن حکام مسافروں کی شرائط کا پورا ہوناچیک کرسکتے ہیں۔ ترجمان پی آئی اے کے مطابق مطلوبہ شرائط پوری نہ ہونے پر مسافر کو سفری مشکلات کا سامنا ہو سکتا ہے۔

بحوالہ: جاوید چوہدری ڈات کوم

اپنا تبصرہ بھیجیں