کنکریٹ بلاک خار دار تاروں کے ساتھ اب بھی فروانیہ ، خیطان اور جلیب الشیوخ کے آس پاس موجود

اگرچہ وزرا کونسل کے فروانیہ ، خیطان اور جلیب الشیوخ کو الگ تھلگ کرنے کا فیصلہ ختم کئے ہوئے دو ماہ سے زیادہ کا عرصہ گزر گیا ہےلیکن اب بھی تنہائی کے طریقے واضح طور پر نظر آتے ہیں کیونکہ ابھی بھی ان علاقوں کو بلاک کرنے والی ٹھوس رکاوٹیں سڑکوں کو الگ کرتی اور گلیوں کے جمالیاتی ظہور کو مسخ کرتی ہیں۔

تنہائی کے طریقے صرف ٹھوس رکاوٹوں تک ہی محدود نہیں ہیں بلکہ ان میں خاردار تاریں بھی شامل ہیں جو مذکورہ بالا علاقوں میں سڑکوں کوایک دوسرے سے الگ کرتی ہیں۔ ابھی تک متعلقہ سرکاری ایجنسیوں نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے اقدامات کے حصے کے طور پر بیشتر علاقوں میں ان رکاوٹوں کو برقرار رکھنے کا جواز فراہم نہیں کیا۔

بحوالہ : عرب ٹائمز کویت

اپنا تبصرہ بھیجیں